ہاف کرونا،چائنا کا مال، آدھی چینی، اور چنکی کون


نئی دہلی: بھارت میں معروف خاتون کھلاڑی کو والدہ کی وجہ سے ’ہاف کرونا‘ کہہ کر تنقید کا نشانہ بنایا جانے لگا۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کی سرکار میں سرحدیں تو غیرمحفوظ ہیں ہی لیکن اب بھارتی کھلاڑی بھی نسلی تعصب کا نشانہ بننے لگے۔

بھارت کے لیے کئی میلڈلز جیتنے والی بیڈمنٹن کھلاڑی کو چائینز ماں کی وجہ سے ’ہاف کرونا‘ کہہ کر تنقید کا نشانہ بنایا جانے لگا۔ بھارتی کھلاڑی کا کہنا ہے کہ بہت ہوگیا اب خاموش نہیں رہیں گی، بھارت کے لوگوں کے روئیے سے بہت دکھ پہنچا ہے۔

بیڈمنٹن کھلاڑی کا کہنا تھا کہ والدہ کا تعلق چین سے مجھے اس پر فخر ہے اور کسی کو کوئی حق نہیں پہنچتا کہ وہ ان پر اس طرح تنقید کرے۔

رپورٹ کے مطابق بیڈمنٹن پلیئر جوالا گوٹا کا تعلق آندھرا پردیش سے ہے اور ان کے والد آںدھرا پردیش اور والدہ کا تعلق چین سے ہے۔

خاتون کھلاڑی نے انتہائی غصے میں کہا کہ اس سے قبل بھی انہیں چائنا کا مال، آدھی چینی، اور چنکی کہہ کر سوشل میڈیا پر تنقید کی جاچکی ہے اور اب ایک نئے نام کا اضافہ کردیا گیا ہے جس میں ہاف کرونا شامل ہے۔

انہوں نے کہا کہ جب ہم ان کے بارے میں پوچھ گچھ کرنا پسند نہیں کرتے تو یہ ہماری ثقافت اور کھانے کی عادات پر سوال کرنے والے کون ہوتے ہیں

Leave a comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *